جامعہ کی موجود ہ صورت حالت
بقلم حضرت مولانا سید حبیب احمد صاحب باندوی ناظم جامعہ

الحمد لللہ رب العلمین والصلوۃ والسلام علی سید انبیاء والمرسلین وعلی آلہ وصحبہ اجمعین و بعد
الحمدللہ جامعہ عربیہ ہتورا باندہ ، یوپی، ملک کی عظیم دینی مرکزی درسگاہوں میں سے ہے ،یہ ادارہ تقریباً ۶۷سال سے دین متین کی عظیم خدمات انجام دے رہا ہےاس کے فضلاء کی بہت بڑی تعدا دملک و بیرون ملک دینی خدمات انجام دے رہی ہے ،اس مختصرعرصے میں اللہ رب االعزت نے اسے جو قبولیت عطا کی ہے اسے بجا طورپر بانی علیہ الرحمہ کااخلاص،ایثار قربانی اورنصرت خداوندی کا مظہر ہی کہا جاسکتا ہے،اس پرفتن وپر آشوب دورمیں،شہر کی آلودگی اور شرورو آفات سے دور دیہات کے سادے وپر سکون ماحول میں دین کی سر بلندی اور قوم ملت کے نونہالوں کی صحیح اسلامی تعلیم و تربیت میں پوری طرح مصروف ہے ، جامعہ کی قیام کیساتھ ہی والد صاحب علیہ الرحمۃکا بنیادی مقصد یہ تھا کہ گائو ںگائوں ،قصبے قصبے مکاتب قائم کئے جائیں ،تاکہ عام مسلمانوں میں قرآن و سنت کی تعلیم کو عام کیا جائے اور صحیح عقیدہ کے مطابق ان کی تعلیم و تربیت کا مستقل انتظام کیا جائے۔
الحمد اللہ اللہ رب العزت کے فضل و کرم ،حضرت بانی ؒکے اخلاص و ایثار ،اکابر کی توجہات اوراحباب کی فکر و تعاون کی برکت سے والد صاحب کے جملہ کام انجام پارہے ہیں ،اور جامعہ اپنے تمام شعبوں کی عظیم الشان کارگردگی کے سا تھ ساتھ علاقہ کی دینی و تربیتی امورکی خدمات بھی انجام دے رہا ہے ۔
ضرورت و تقاضے کے تحت یہ چند باتیں عرض کردی گئیں ہیں تاکہ جامعہ کے مکمل تعارف کا کام کریں ، اس پر والد صاحب کی وہ پر سوز تحریر بھی شامل ہے جو مدرسے کی اولین روئداد میں شامل ہوئی تھی ،یہ جامعہ کے دور اول کی صحیح ترجمان ہے او ر اس کے بعد پھر جامعہ کی مختصر تاریخ و کوائف ۔
جامعہ کے سار ے کام محض اللہ رب العزت کے فضل و کرم اور مخیرّین، مخلصین اور محسنین کے تعاون سے انجام پارہے ہیں،امید ہے کہ اہل خیر حضرات اس سے فائدہ اٹھائیں گے اور ہر طرح کا تعاون فرمائیں گے جامعہ کے دائر ہ کار میں روز بروز وسعت کے ساتھ مصارف میں بھی اضافہ ہوتا جار ہا ہے ،کچھ تو کاموںکی وسعت اور تنوع کی وجہ سے اور کچھ مہنگائی کی وجہ سے اس صورت حال میں جملہ معاونین و محبین سے گذارش ہے کہ وہ بھی تعاون میں اضافہ فرمائیں ساتھ ہی اپنے حلقہ احباب کو بھی متوجہ فرمائیں ، اور ہو سکے تو وقت نکال کر جامعہ تشریف لاکر بچشم خود ملاحظہ فرمائیں ۔
فانّ اللہ لا یضیع اجرالمحسنین( بیشک اللہ تعالی نیکوکار کا بدلہ ضائع نہیں کرتا ) (القرآن)